Rasheed Asar | Urdu Poetry | Meray hathon ki lakeeron ko mukammal kar day

 رشید اثر کراچی میرے ہا تھوں کی لکیروں کو مکمل کردے کوئی سینے سے لگا کر مجھے پاگل کردے میرے اطراف گلابوں کی فصیلیں نہ بنا اپنی خو شبو میں […]

 رشید اثر
کراچی

میرے ہا تھوں کی لکیروں کو مکمل کردے
کوئی سینے سے لگا کر مجھے پاگل کردے

میرے اطراف گلابوں کی فصیلیں نہ بنا
اپنی خو شبو میں بسا کر مجھے صندل کردے

میرے پاس آکے گھٹاو ں کی طرح مجھ پہ برس
میں فقط ایک شجر ہوں مجھے جنگل کردے

تشنگی اب تو مری روح تک آپہنچی ہے
آ مری پیاس کے صحراو ں کو جل تھل کردے

جسم و جاں سے نہ کوئی ربط نہ رشتہ میرا
میں ادھور ا ہوں مجھے کوئی مکمل کردے

عشق خو د اپنے قوانین بنا لیتا ہے
جہل اگر زیست کا دستو ر معطل کردے

پھر وہی شخص محبت کا طلبگار بھی ہو
جو مرے کوچہ و بازار کو مقتل کردے

پیار اک آبِ شفاء ہے اسے شفاف ہی رکھ
باقی جذبات کے دریاو ں کو دلدل کردے

لمس میں اسکے وہ اعجازِ ہنر ہے کہ اثر
مجھ سے کھدر کو بھی اک آن میں مخمل کردے

Viewers: 6137
Share