Shaheena Khatib | شاہینہ خطیب کو ناگپور یونیورسٹی سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری

رپورٹ: عزیز بلگامی بنگلور۔ بھارت azeezbelgaumi@hotmail.com شاہینہ خطیب کو ناگپور یونیورسٹی سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری ناگپور۔۹ا ستمبر۔ انجمن ہائی اسکول اینڈ جونیئر کالج میں فزکس کی لیکچرار شاہینہ خطیب کو […]

رپورٹ: عزیز بلگامی
بنگلور۔ بھارت
azeezbelgaumi@hotmail.com

شاہینہ خطیب کو ناگپور یونیورسٹی سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری

ناگپور۔۹ا ستمبر۔ انجمن ہائی اسکول اینڈ جونیئر کالج میں فزکس کی لیکچرار شاہینہ خطیب کو راشٹر سنت تکڑوجی مہاراج ناگپور یونیورسٹی نے ’’پدم بھوشن مولانا عبدالکریم پاریکھ:حیات و خدمات‘‘ پر پیش کئے گئے اُن کے گرانقدر مقالے پر پی ایچ ڈی کی ڈگری تفویض کی ہے۔ ملک اور بیرون ملک میں حضرت مولاناؒ کے مداحوں اور ادبی و دینی حلقوں کیلئے یہ خبر باعث مسرت و انبساط ہے۔ ۲۶؍نومبر کو منعقد ہونے والے یونیورسٹی کے سالانہ کانوکیشن اجلاس میں یہ ڈگری عنایت کی جائے گی۔
شاہینہ خطیب نے عالمی شہرت یافتہ مترجم و مفسر قرآن حضرت مولانا عبد الکریم پاریکھ صاحب مرحوم کی ہمہ گیر شخصیت کے متنوع پہلو ؤں کا اپنے مقالے میں بڑی تفصیل سے احاطہ کیاہے۔ اُنہوں نے یہ مقالہ ڈاکٹر محمد اظہر حیات ، ایچ او ڈی،ڈپارٹمنٹ آف اردو، یشوداگرلس آرٹس اینڈ کامرس کالج ناگپورکی زیر نگرانی مکمل کیا ہے۔محترمہ شاہینہ تبسم صاحبہ شعبۂ درس و تدریس سے وابستہ ہیں اور نیوکلیر فزکس میں ایم ایس سی کیا ہے۔اانہوں نے بی ایڈ کے ساتھ ساتھ اردواور عربی میں بھی ا یم اے کیا ہے۔تقابلی مطالعہ کے لیے دیگر ادیان میں اُن کی دلچسپی اِس حقیقت سے عیاں ہے کہ اُنہوں نے بیسک بائبل کورس میں بھی ڈپلوما کیا ہے۔ اِس وقت وہ قرآنی عربی کلاسس ناگپور کی شعبۂ خواتین کی سربراہ ہیں اور اپنی اِس ذمہ داری کی ادائیگی کے علاوہ پیس فار پروگریس اور دیگر انسانی خدمات کی تنظیموں سے بھی منسلک ہیں۔ ان کی دعوت کا بنیادی پہلو یہ ہے کہ نوجوان نسلوں کو یہ احساس دلایا جائے کہ بغیر امن کے کوئی ترقی سرے سے ممکن ہی نہیں ہے۔ آسمانی کتابوں کے ذریعے دُنیا کے مسائل کا پرامن حل ڈھونڈنے کے لیے کی جانے والی کوششوں میں شمولیت کے لیے محترمہ شاہینہ خطیب کو امریکہ ، نیروبی کے علاوہ دیگر ممالک سے بھی مدعو کیا جاتارہا ہے۔ ایک اچھی انشاء پرداز ہونے کے ساتھ ساتھ وہ ایک شگفتہ مقرر بھی ہیں۔ اُنہیں شعر و سخن سے بھی لگاؤ ہے اور وہ شانؔ تخلص فرماتی ہیں۔نیزقرآن مجیدکے دروس میں اپنی سائنسی معلومات کا خوبصورتی سے استعمال فرماتی ہیں ۔

Viewers: 4470
Share