Nasir Mustafa Rana | Ghazal | عشق میں تاجداری کیا ہوتی

شاعر: ناصر مصطفی رانا ایڈریس: رانا منزل ، رانا سٹریٹ ،احمد پور لمہ تحصیل صادق آباد ضلع رحیم یار خان، پنجاب، پاکستان غزل عشق میں تاجداری کیا ہوتی عقل کی […]

شاعر: ناصر مصطفی رانا
ایڈریس: رانا منزل ، رانا سٹریٹ ،احمد پور لمہ تحصیل صادق آباد
ضلع رحیم یار خان، پنجاب، پاکستان

غزل

عشق میں تاجداری کیا ہوتی
عقل کی ہوشیاری کیا ہوتی
مرمریں بت سے اُلفتِ پیہم
دل کی واں غمگساری کیا ہوتی
حشر ساماں ہیں نرگسی آنکھیں
مے کی پھر پاسداری کیا ہوتی
سنبلیں زلف ، گیسوئے مشکیں
شب پہ اور ضرب کاری کیا ہوتی
جانِ محفل نہیں تو کیسے پھر
محفلوں میں خماری کیا ہوتی
خمیدہ ابرو کے تیر خوردہ کو
فرصتِ آہ و زاری کیا ہوتی
رات ڈھلنے پہ آگئی ناصرؔ
تاروں کی اشکباری کیا ہوتی

Viewers: 21511
Share