Basharat Ali Sharar | Urdu Nazam | بشارت علی شرر کی ایک نظم

بشارت علی شرر ہاوسP313/7۔ گلی 6۔ محمد پورہ فیصل آباد۔ پاکستان sharar.gee@gmail.com ایک نظم خلوتوں کے میلے میں خواہشیں ادھوری ہیں جینا اک پہیلی ہے موت کیوں اکیلی ہے؟ رنجشیں […]

بشارت علی شرر
ہاوسP313/7۔ گلی 6۔ محمد پورہ
فیصل آباد۔ پاکستان
sharar.gee@gmail.com

ایک نظم

خلوتوں کے میلے میں
خواہشیں ادھوری ہیں
جینا اک پہیلی ہے
موت کیوں اکیلی ہے؟
رنجشیں مٹا دی ہیں
حسرتیں لٹا دی ہیں
اک تیرے بچھڑنے پر
سانس ہی بچی ہے بس
اس کو بھی لوٹا دوں گا
خود کو بھی مٹا دوں گا
موت روٹھ بیٹھی تھی
اس کو بھی منالوں گا

Viewers: 5248
Share