محمد ممتازراشد کوشریف اکیڈمی جرمنی کاڈائریکٹردوحہ نامزد کیا گیا

معروف شاعر، ادیب اور دانشور محمد ممتاز راشدکو  شریف   اکیڈمی جرمنی کاڈائریکٹردوحہ (قطر) نامزد کیا گیا

محمد ممتاز راشد کا تعلق بنیادی طور پر پاکستان کے تاریخی شہر لاہور سے ہے تاہم گزشتہ کئی سالوں سے قطر کے شہر دوحہ میں بسلسلہ روزگار مقیم ہیں اعلیٰ یافتہ ہونے کے ساتھ ساتھ علمی ، ادبی ،صحافتی اور سماجی میدان میں بے شمار خدمات سرانجام دے چکے ہیں۔ جن کے علمی اور ادبی کام سے نہ صرف ایک زمانہ آشناہے بلکہ مختلف حلقوں سے پذیرائی اور داد تحسین بھی حاصل کررکھی ہے ممتاز راشدجہاں دوحہ میں علم و ادب کے فروغ کے لئے دن رات سرگرم عمل ہیں وہاں پاکستان میں بھی ان کا رابطہ اور تعلق اہل علم ودانش سے مسلسل برقرار رہتا ہے۔اب تک ملک اور بیرون ملک سے متعد د ایوارڈز ، میڈلز اور حسن کارکردگی سرٹیفکیٹ حاصل کرنے والے ممتاز راشددوحہ میں بھی علم وادب کے میدان میں وطن کا نام روشن کرنے میں دن رات کوشاں ہیں۔ ممتاز راشد کی شاعری ، نثر اور تحقیق و تاریخ سے متعلق اب تک بیس کے قریب کتابیں شائع ہوکر منصۂ شہود پر آچکی ہیں جنہیں عوام او ر خواص کے حلقوں سے یکساں مقبولیت اور پذیرائی ملی ہے ان کی شائع ہونے والی کتب میں چند تصانیف کے نام یہ ہیں شعرائے قطر سے متعلق لکھی گئی کتاب ،،صحرا کی ٹھنڈی شامیں،،حمد ونعت اور سلام پر مبنی شاعری کی کتاب ،،عقیدتِ خام،، مزاحیہ شاعری کی کتاب ،،مذاق مذاق میں،،نظموں کا مجموعہ ،،تیرا جادو بول رہا ہے،، غزلوں کا مجموعہ ،،کاوش،، پاکستان کے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے دارالحکومت لاہور سے متعلق ایک اہم کتاب معروضات لاہوراور وطن عزیز کے درجنوں نامور گیت نگاروں کے فن اور شخصیت پر مبنی انتہائی کتاب ،،پاکستانی نغمہ نگاران،، شامل ہیں ممتاز راشد کی مستقبل میں آنے والی کتابوں میں سفر نامہ ،،خلیج نوردی ،، پنجابی شاعری کی کتاب ،،کرماں دی چھاں کردے ،، اور بچوں سے متعلق لکھی گئی نظموں کی کتاب ،،جب لاڈلا منا جاگے گا،،شامل ہیں جبکہ علم وادب کے فروغ کے لئے ایک ادبی میگزین بھی شائع کرتے ہیں جس میں دنیا کے مختلف ادیبوں اور دانشوروں کے تحریریں شامل کی جاتی ہیں۔ ممتاز راشد پاکستان اور دوحہ سمیت دنیا کے مختلف علمی اور ادبی حلقوں میں کسی تعارف کے محتاج نہیں شریف اکیڈمی جرمنی کے چیف ایگزیکٹو مایہ ناز شاعر اور دانشور شفیق مراد کے حالیہ دورہ پاکستان کے دوران اکیڈمی کے ڈائریکٹرز کے اہم اجلاس جس میں ایگزیکٹو ڈائریکٹرساؤتھ ایشیا غزالہ عالم اور ڈائریکٹر پاکستان ولایت احمد فاروقی بھی موجود تھے محمد ممتاز راشد کو ان کی علمی اور ادبی خدمات کے پیش نظرشریف اکیڈمی جرمنی کا ڈائریکٹر دوحہ (قطر ) نامزد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ممتاز راشد کی نامزدگی پر شفیق مراد نے اس امید کا اظہار کیا کہ ان کی شمولیت سے شریف اکیڈمی کی دوحہ میں کارکردگی انتہائی بہتر انداز میں آگے بڑھے گی اور اکیڈمی کے فروغِ علم وادب کے اغراض ومقاصد کی تکمیل میں بے حدمدد ملے گی محمد ممتاز راشد کی نامزدگی پر حاجی شریف احمد ایجوکیشنل اینڈ لٹریری اکیڈمی جرمنی کے چیف ایگزیکٹو شفیق مرا د اور تمام ڈائریکٹرز نے انہیں مبارکباددی ہے۔

Viewers: 1144
Share