Nasir Malik | Khaka | امین شاد ۔۔۔۔ امین جیکسن لوہار بننے کے چکر میں

جی ہاں۔۔۔۔ میرا ایک خواب تھا۔ میں پاکستان کا۔۔۔۔ نہیں یار۔۔۔۔ میں دنیا کا۔۔۔۔ نہیں یار۔۔۔ غلط بات منہ سے نکل جاتی ہے۔۔۔۔ میں رہتی دنیا کا سب سے بڑا شاعر بننے کا خواب دیکھتا رہتا تھا۔ ایک شعر لکھا۔ پڑھا۔ رونگٹے کھڑے ہو گئے۔ نہیں یار۔۔۔۔ پھر غلط ہو گیا۔ میرے کوئی ہزاروں رونگٹے تھ تھے نہیں جو کلاس سٹینڈ کا نعرہ سن کر کھڑے ہو جاتے۔ میں خود ہی کھڑا ہو گیا۔ اپنے پہلے شعر کا احترام کرنے میں جلدبازی کا مظ

اہرہ ہوا اور چک پڑ گئی۔ پہلی مرتبہ اس عظیم الشان شعری کیفیت سے واسطہ پڑا۔ دل جھوم اٹھا۔ میں نے اپنے لنگوٹیے شاعر آنجہانی افتخار شاہد ڈسکوی مغفور و مجبور سے ہنگامی رابطہ کیا۔ اسے شعر سنایا تو اس کی حالت بگڑ گئی۔ اس کو شعر سنتے ہی چک پڑ گئی اور ساتھ میں بونس کے طور پر ناف بھی پڑ گئی۔ اس نے واویلہ کیا کہ اور کم بخت حادثاتی شاعر۔۔۔۔ تمہیں تو امین شاد کے بجائے امین چکوی یا امین نافوی ہونا چاہیے۔ بس پھر کیا تھا۔۔۔ ہم دونوں نے سر جوڑے۔ اپنے دشمنوں کی فہرست مرتب کی۔ بھاگم بھاگ فوٹو سٹیٹ والے دعوتی کارڈ بانٹے اور خاک بدنداں مشاعرے کی داغ بیل ڈال دی۔ شام کو ہونے والے مشاعرے میں ہم نے تمام دو ٹکے کے شاعروں کا ناطقہ بند کر دیا۔ یہ ناطقہ ڈسکہ کی ادبی فضا میں آج بھی بند تصور کیا جاتا ہے حالانکہ شہر کے تمام راستے کھلے ہیں۔ وہ دن گیا۔۔۔۔ آج کا دن آیا۔۔۔۔۔ شہرت کے سفر پر دوڑا دوڑی جاری ہے۔ ناطقے پر ناطقہ بند ہو رہا ہے اور پروانوں کی قطاریں لگ رہی ہیں۔ اسی دوران پھر ایک مجموعہ کلام پیدا ہوا جسے یعقوب انجم نے چھاپ مارا۔ وہ دوستوں کے سر میں کم اور میرے سر میں زیادہ لگا۔ پھر دوسرا۔۔۔۔ پھر تیسرا۔۔۔۔ پھر چوتھا۔۔۔۔۔ گھر والے تنگ آ گئے۔ کہنے لگے۔۔۔۔ میاں اب اس کام کو ترک نہیں کرنا تو اس میں کوئی ترقی ہی کر دکھائو۔۔۔۔ ان دنوں میرا لنگوٹیا افتخار شاہد تازہ تازہ کاروباری خسارے میں دھول چاٹ رہا تھا۔ اس کی تمام حسیں بیدار تھیں۔ اس نے میرا کام اپنے ہاتھ میں لیا اور دیکھتے ہی دیکھتے مجھے گلی گلی گاتا جائے بنجارا بنا کے رکھ دیا۔۔۔۔۔ آہ۔۔۔۔ میرے بیٹے نے جب میرا یہ حال دیکھا تو گلہ کیا کہ انکل یہ کیا کر دیا گیا ہے میرے بابا جانی کے ساتھ۔۔۔۔۔ تو وہ کمال اعتماد سے بولے۔۔۔۔۔ چک اور ناف کا بدلہ لینے کے لئے میں نے تمہارے بابا جانی میں آدھی روح مائیکل جیکسن کی اور آدھی عالم لوہار کی ڈال دی ہے۔۔۔۔۔۔۔ اب یہ امین شاد نہیں بلکہ تاریخی کردار امین جیکسن لوہار ہے۔۔۔۔۔۔ امین جیکسن لوہار۔۔۔۔۔۔

 

Viewers: 1200
Share