Farrakh Shahbaz Waraich | Column | ایک شریف آدمی

فرخ شہباز وڑائچ farrukhshahbaz03@gmail.com 03214506816 ایک شریف آدمی!! کیونکہ میں ایک عظیم انسان ہوں۔۔۔۔ اس لئے یہ میرا فرض بنتا ہے کہ میں آپ کو دنیا کی عظیم شخصیات سے […]
فرخ شہباز وڑائچ
farrukhshahbaz03@gmail.com
03214506816
ایک شریف آدمی!!
کیونکہ میں ایک عظیم انسان ہوں۔۔۔۔ اس لئے یہ میرا فرض بنتا ہے کہ میں آپ کو دنیا کی عظیم شخصیات سے ’’وقتا فوقتا‘‘ متعارف کرواتا رہو
ں۔آج میں جس عظیم انسان کی تعریف میں’’پل‘‘ باندھنے جا رہا ہوں مجھے تو یہ انسان کم۔۔۔شریف آدمی ’’زیادہ‘‘ لگتے ہیں۔آپ کی آسانی کے لئے یہاں بتاتا چلوں ۔۔۔یہ نا تو نواز شریف ہیں نا ہی عمر شریف ۔۔۔بلکہ ان کا اسم گرامی شہزاد چوہدی ہے۔شہزاد چوہدری ویسے تو ایک سرکاری آفیسر ہیں لیکن!!پارٹ ٹائم ۔۔شاعری کا بھی’’شغل ‘‘ بھی فرماتے ہیں۔بچپن میں ہی ان کو ’’غزل‘‘ سے محبت ہو گئی تھی پھر۔۔۔’’غزل‘‘ نے مکان شفٹ کر لیا ۔۔آج جب شہزاد چوہدری صاحب اپنی’’پونی‘‘ عمر گزار چکے ہیں ۔۔۔آج بھی ’’غزل‘‘ سے اتنا ہی پیار کرتے ہیں جتنا شروع میں کرتے تھے۔۔۔ (نوٹ؛’’الفاظ پر زیادہ غور کرنا اور غلط غلط مطلب نکالنا منع ہے‘‘)۔۔۔ شہزاد چوہدری صاحب نے آج تک کسی کو نہیں ’’چھیڑا‘‘ اور نا ہی آج تک کسی نے ان کو ’’چھیڑا‘‘ ہے۔۔نوجوانوں کی’’ فلاح وبہبود‘‘ اور برائی سے دور رکھنے کے لئے جتنا کام شہزاد چوہدری نے کیا ہے شاید ہی کسی نے کیا ہو آج بھی جب کسی انگریزی اخبار میں کوئی ’’ایسی ویسی‘‘ تصویر دیکھتے ہیں تو اس نیک نیتی ۔۔۔کے جذبہ کے تحت پھاڑ کر اپنے ’’پرس‘‘ میں محفوظ کر لیتے ہیں کہ کہیں کوئی نوجوان تصویر دیکھ کر ’’خراب‘‘ نہ ہو جائے۔۔۔ شرافت ان کے محلے میں پرچون والا ہے ۔۔۔اتنے شریف آدمی ہیں نہ انھوں نے ’’شرافت‘‘ کا دامن چھوڑا ہے اور نہ ہی شرافت نے ان چھوڑنے دیاہے۔۔۔۔اسی لئے یہ کہنا غلط نا ہو گا شہزاچوہدری اور ’’شرافت‘‘ کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔۔۔شہزاد چوہدری نے فرمانبرداری کی جو روایت شادی کے وقت قائم کی تھی آج شادی کے اتنے سالوں بعد بھی اپنی بیگم کے۔۔۔۔۔اسی طرح فرمانبردار ہیں۔۔۔شہزاد چوہدری صاحب ہر فن مولا ہیں یہ بات مجھے تب پتا چلی جب دوستوں کی محفل میں ایک مرتبہ ان کو بیگم کا فون آیا ’’دوپٹہ گورنمنٹ ‘‘ کے پوچھنے پر جب یہ بتانا مقصود تھا کہ’’ میں ٹریفک میں ہوں‘‘ تو چوہدری صاحب نے بڑی ’’فنکاری‘‘ کے ساتھ منہ کے الٹے سیدھے ’’پوز‘‘ بنا کر ’’چنگ چی‘‘ کی آوازیں نکالیں۔۔۔تب جا کہ دوپٹہ گورنمنٹ کو یقین آیا۔۔۔اسی طرح دو تین مواقع پر ہمیں۔۔۔ویسپا سکوٹر۔۔۔ 2 سٹروک رکشوں۔۔۔بسوں۔۔۔ٹرکوں ۔۔۔کی آوازیں انجوائے کرنے کا موقع ملا تب جا کہ ہمارے علم میں اضافہ ہوا کہ جنہیں ہم شریف آدمی سمجھتے رہے وہ تو اتنی عجیب عجیب آوازیں نکالنے کا فن بھی جانتے ہیں’’ اصل سے بہتر نقل‘‘۔۔۔وہ تو بھلا ہو ٹی وی والوں کا انھوں نے ان کو ابھی تک اس طرح سے آوازیں نکالتے نہیں دیکھا ورنہ جناب کب کہ۔۔۔ اینکر پرسن کے عہدے پر ’’بھرتی‘‘ ہو چکے ہوتے
شہزاد چوہدری’’مستقل مزاج‘‘ آدمی ہے ۔۔۔۔اتنا مستقل مزاج ہے۔۔ آج بھی انھی لوگوں سے دھوکہ کھا رہا ہے ۔۔۔جن سے آج سے پانچ سال پہلے دھوکا کھاتا تھے۔۔۔ شہزاد چوہدری کی شرافت کن ’’حدوں‘‘ کو چھو رہی ہے؟ اس بات کا اندازہ یہاں سے لگائیں شہزاد چوہدری کبھی لڑکیوں کے قریب نہیں جاتے اس کی ایک وجہ جو مجھے سمجھ میں آتی ہے لڑکیاں انہیں پاس آنے ہی نہیں دیتیں!!
شہزاد چوہدری کی شاعری پڑھ کر کوئی شخص ’’متاثر‘‘ ہوئے بغیر نہیں رہ سکتا جس طرح سے ان کی شاعری کی وجہ سے’’متاثرین‘‘ کی تعداد ن بہ دن بڑھ رہی ہے مجھے ڈر ہے کہ کہیں ان متاثرین کی تعداد ۔۔۔سیلاب متاثرین کو ’’کراس‘‘ نہ کر جائے۔۔۔جو شاعری یہ صاحب فرما رہے ہیں وہ ہمارے زمانے سے ناپید ہوتی جارہی ہے ان کی اس قسم کی شریفانی شاعری کی بنا پر میرے خیال میں ان کی کتاب کا نام کچھ اس طرح سے ہونا چاہئے تھا ’’ٹھنڈی اور شریفانہ شاعری‘‘ ۔۔۔’’محبوب بھی اچھے ہوتے ہیں‘‘ ۔۔۔’’سچی مچی کی رفاقتیں‘‘۔۔۔شہزاد چوہدری اچھے آدمی ہونے کے ساتھ ساتھ اچھے شاعر بھی ہیں جس ’’تیزی‘‘ سے یہ شاعری فرما رہے ہیں میں شعراء کو خبردار کرنا اپنا فرض سمجھتا ہوں!!آنے والے دنوں میں شہزاد چوہدری دن د ہیاڑ ے سر عام مشاعرے ’’لوٹا ‘‘ کریں گے۔۔۔
!شہزاد چوہدری کی شاعری کی ایک کتاب بھی آچکی ہے جس کا نام ہے ’’تیری رفاقتوں کے بعد‘‘ کتاب کا یہ نام تجسس میں بھی مبتلا کرتا ہے اب پتا نہیں۔۔۔۔۔کن رفیقوں کی ’’رفاقتوں‘‘ کے بعد یہ کتاب منظر عام پر آرہی ہے!!آنے والے دنوں میں اس کتاب کی تقریب رونمائی ہو رہی ہے ویسے جتنی عزت افزائی شاعر حضرات کو اپنی کتا ب کی تقریب رونمائی میں ملتی ہے ۔۔اتنی ’’پذیرائی‘‘ کبھی شاعر کو اپنے ولیمے پر نصیب نہیں ہوتی ہے۔۔۔میں چاہوں تو یہاں شہزاد چوہدری کے شریف آدمی ’’واقع‘‘ ہونے پر بہت سے دلائل دے سکتا ہوں لیکن ابھی مجھے اپنے کچھ کام بھی نکلوانے ہیں۔
(نوٹ؛ ’’کیونکہ میں بقلم خود ایک عظیم انسان ہونے کے ساتھ ساتھ ایک شریف آدمی بھی ہوں لہذا سب پڑھنے والوں پر واجب ہے کہ وہ اوپر لکھی گئی تمام باتوں پر آنکھیں بند کر کے ایمان لائیں‘‘)
Viewers: 2771
Share