اردو اکادمی اور فخرالدین کمیٹی کی بحالی کے لیے تحریک

 

(انجمن فروغ اردو، میرٹھ)حکومت سازی کے9؍ ماہ گذر جانے کے بعد بھی اردو اکادمی اور فخرالدین علی احمد کمیٹی کے چےئر مین اور اراکین کی نامزدگی اب تک عمل میں نہیں آئی ہے۔ اتر پردیش میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ حاصل ہے اس کے باوجود اردو کے ساتھ ایسا سلوک ہو رہا ہے اور مقامِ افسوس ہے کہ اردو وا لوں نے بھی خاموشی اختیار کررکھی ہے۔ اس طرح اپنی زبان پر ہونے وا لے ظلم و ستم کے ہم خود ذمہ دار ہیں۔محبان اردو سے اپیل! آئیے، ہاتھ سے ہاتھ ملائیں اور ایک ساتھ۸؍ دسمبر کو اپنے اپنے شہر میں ایک پانچ نکاتی میمو رنڈم ڈی ایم کے ذریعہ وزیر اعلی کو بھجوائیں اور میمورنڈم کے ایک ماہ کے اندر اردو اکادمی اور فخرالدین کمیٹی بحال نہیں ہو تی ہیں تو ہم سب محبان اردو،سمبلی کے سامنے دھرنا دیں گے۔اردو کے حقوق کی پا مالی کسی قیمت برداشت نہیں کریں گے۔ ہم حکومت کے مخالف نہیں، اردو کے طرف دار ہیں۔
Viewers: 809
Share