Dr Aslam Jamshedpuri | اے میرے قلم

ڈاکٹر اسلم جمشیدپوری۔ میرٹھ۔ انڈیا اے میرے قلم! اے میرے قلم، تم کہاں ہو۔۔؟ دوات نے ایک آہِ سرد بھر کر قلم کو یاد کیا۔ ’’ میں تمھاری دوات ہوں،تمھارے […]
ڈاکٹر اسلم جمشیدپوری۔
میرٹھ۔ انڈیا
اے میرے قلم!
اے میرے قلم، تم کہاں ہو۔۔؟
دوات نے ایک آہِ سرد بھر کر قلم کو یاد کیا۔
’’ میں تمھاری دوات ہوں،تمھارے بغیر نا مکمل۔۔۔۔،
بلکہ ہم دونوں کی تخلیق ایک دوسرے کے لئے ہی ہوئی ہے تا کہ۔۔۔۔‘‘
۔۔۔۔۔۔
اے قلم ، اب تو آ جاؤ، کہاں ہو تم ؟
آؤ مجھ میں ڈوب جاؤ
ابھرو اور پھر ڈوب جاؤ
آؤ ، میرے قلم آؤ
ہمارا وصال ،وجہِ تخلیق ہے۔
وجودِازل وابد ہے۔
تصویرِ کائنات میں رنگ و بو ہے۔
تخلیق ، زندگی
تخلیق ، زندگی کا نگار خانہ
تخلیق ، نفوس کی شرح میں اضافہ
نفوس کا جمِ غفیر کائنات کے حسن کا با عث ہے۔
۔۔۔۔۔۔
یہ سب!!!
اے میرے قلم تمھارے بغیر نا ممکن ہے۔
آ جاؤ ، مجھ میں سما جاؤ
اور تحریر کی ، تخلیق کی ،شروعات کرو
کہ لفظِ کن کی صدا بلند ہو نے والی ہے۔
ایک نئی کائنات وجود میں آنے کو ہے۔
۔۔۔۔۔۔
Viewers: 2925
Share