Nasir Malik | ازل سے خلقِ خدا کے سر پر شجر وہی ہے

Share