نامور شاعر اور نغمہ نگار حمایت علی شاعر انتقال کر گئے

Image result for himayat ali shair

نامور شاعر حمایت علی شاعرؔ انتقال کر گئے،

رپورٹ: بلال اسعد

کراچی سے تعلق رکھنے والے ممتاز شاعر اور نامور گیت نگار حمایت علی شاعر کا کنیڈا میں انتقال ہو گیا۔ چند دن قبل ان کے بیٹوں بلند اقبال اور اوجِ کمال نے بہت مسرت اور احترام سے ان کی 93 ویں سالگرہ کا اہتمام کیا تھا۔ ان کا نام میر حمایت علی اور شاعرؔ تخلص ہے،14 جولائی 1926ء کو اورنگ آباد (دکن) میں پیدا ہوئے۔ روزنامہ ’خلافت‘ میں کام کیااور ریڈیو سے وابستہ ہوگئے۔ 1943 میں سندھ یونیورسٹی سے اردو میں ایم اے کیا۔حمایت علی شاعر نے فلموں کے لیے گانے بھی لکھے ۔ شاعری میں ایک نیا تجربہ ’’ثلاثی‘‘ کے تحت کیا ہے جس میں تین مصرعے ہوتے ہیں۔ حمایت سندھ یونیورسٹی کے شعبۂ اردو سے بھی منسلک رہے۔آپ کی تصانیف کے نام یہ ہیں: ’آگ میں پھول‘، ’شکست آرزو‘، ’مٹی کا قرض‘، ’تشنگی کا سفر‘، ’حرف حرف روشنی‘، ’دود چراغ محفل‘ (مختلف شعرا کے کلام)، ’عقیدت کا سفر‘ (نعتیہ شاعری کے ساتھ سو سال، تحقیق)، *’آئینہ در آئینہ‘ (منظوم خودنوشت سوانح حیات)، ’ہارون کی آواز‘ (نظمیں اور غزلیں)، ’تجھ کو معلوم نہیں‘ (فلمی نغمات)، ‘کھلتے کنول سے لوگ‘ (دکنی شعرا کا تذکرہ)، ’محبتوں کے سفیر‘ (پانچ سو سالہ سندھی شعرا کا اردو کلام)۔ حمایت علی شاعرؔ کو نگار ایوارڈ (بہترین نغمہ نگار)، رائٹرگلڈآدم جی ایوارڈ، عثمانیہ گولڈ مڈل (بہادر یار جنگ ادبی کلب) سے نوازا گیا۔ ان کی ادبی اور دیگر خدمات کے صلے میں حکومت پاکستان نے صدارتی ایوارڈ سے بھی نوازا۔

اپنے کسی عمل پہ ندامت نہیں مجھے
تھا نیک دل بہت جو گنہ گار مجھ میں تھا

ﯾﮧ ﺷﮩﺮ ﺭﻓﯿﻘﺎﮞ ﮨﮯ ﺩﻝ ﺯﺍﺭ ﺳﻨﺒﮭﻞ ﮐﮯ
ﻣﻠﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﮩﺎﮞ ﻟﻮﮒ ﺑﮩﺖ ﺭﻭﭖ ﺑﺪﻝ ﮐﮯ

پھر مری آس بڑھا کر مجھے مایوس نہ کر
حاصلِ غم کو خدا را غمِ حاصل نہ بنا

اس دشتِ سخن میں کوئی کیا پھول کھلائے
چمکی جو ذرا دھوپ تو جلنے لگے سائے

بدن پہ پیرہن خاک کے سوا کیا ہے
مرے الاؤ میں اب راکھ کے سوا کیا ہے

روشنی میں اپنی شخصیت پہ جب بھی سوچنا
اپنے قد کو اپنے سائے سے بھی کم تر دیکھنا

اس دشت پہ احساں نہ کر اے ابرِ رواں اور
جب آگ ہو نم خوردہ تو اٹھتا ہے دھواں اور

میں سچ تو بولتا ہوں مگر اے خدائے حرف
تو جس میں سوچتا ہے مجھے وہ زبان دے

ﻟﺐِ ﺑﺴﺘﮕﯽ ﻣﯿﮟ ﺣﺴﺮﺕِ ﮔﻔﺘﺎﺭ ﺟﺎﮒ ﺍﭨﮭﯽ
ﺧﻮﻑِ ﺳﮑﻮﺕ ﺟﺮﺃﺕ ﺍﻇﮩﺎﺭ ﺩﮮ ﮔﯿﺎ

ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﮯ ﺯﺍﻭﯾﻮﮞ ﭘﺮ ﻣﻨﺤﺼﺮ ﮨﮯ ﺯﻧﺪﮔﯽ
ﺁﭖ ﮐﮯ ﺑﺲ ﻣﯿﮟ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﺁﭖ ﮐﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﯾﮩﺎﮞ

انا للہ وانا الیہ راجعون

Viewers: 221
Share